اختلافات بڑھ گئے!  جے یو آئی (ف) کا پیپلز پارٹی سے مقابلے کا فیصلہ

اختلافات بڑھ گئے! جے یو آئی (ف) کا پیپلز پارٹی سے مقابلے کا فیصلہ…..(روزنامہ سیاست)

بدین (نیوز ڈیسک ) اپوزیشن جماعتوں کے اتحاد پاکستان دیئموکریٹک موومنٹ کے باہمی اختلافات میں شدت آگئی ، جے یو آئی ف نے صوبہ سندھ میں ضمنی الیکشن میں پیپلزپارٹی سے بھرپور مقابلے کا فیصلہ کرلیا۔ تفصیلات کے مطابق پی ڈی ایم سربراہ مولانا فضل الرحمان کی جماعت جمعیت علماء اسلام ف کی جانب سے سندھ اسمبلی کے حلقہ پی ایس 70 بدین کی نشست پر
مولانا گل حسن کو اپنا امیدوار نامزد کردیا گیا ، جب کہ سندھ کی حکمراں جماعت پاکستان پیپلزپارٹی صوبائی اسمبلی کے حلقہ پی ایس 70 بدین کی نشست پر بلا مقابلہ انتخاب کے لیے کوششیں کرہی تھی لیکن ان کی تمام تر کاوشیں اس وقت رائیگاں ہوگئیں جب اختلافات بڑھنے کے باعث جے یو آئی نے سندھ میں پاکستان پیپلز پارٹی کے لیے انتخابی میدان خالی نہ چھوڑنے کا فیصلہ کیا اور پی ایس 70 بدین کی نشست پر مولانا گل حسن کو اپنا امیدوار نامزد کردیا جب کہ اس سے پہلے جے یو آئی ف نے گھوٹکی ، ملیر اور سانگھڑ کے ضمنی انتخابات میں پاکستان پیپلز پارٹی کے امیدواروں کی حمایت کی تھی۔خیال رہے کہ سندھ اسمبلی کے حلقہ پی ایس 70 بدین کی نشست پیپلز پارٹی کے رکن بشیر ہالیپوتہ کے انتقال کے سبب خالی ہوئی ، جہاں ضمنی الیکشن کے لیے 11 امیدواروں کی جانب سے کاغذات نامزدگی جمع کروادیے گئے۔ علاوہ ازیں حکومت مخالف اتحاد کی سربراہ جماعت جے یو آئی ف نے لاڑکانہ میں پاکستان تحریک انصاف سے ہاتھ ملا لیا ، پاکستان پیپلزپارٹی کے خلاف نیا
عوامی اتحاد تشکیل دے دیا گیا۔میڈیا رپورٹ کے مطابق جے یو آئی نےلاڑکانہ میں پاکستان پیپلزپارٹی مخالف اتحاد تشکیل دیا ہے ، اس حوالے سے جے یو آئی نے پاکستان تحریک انصاف اور گرینڈ ڈیموکریٹک الائنس کے مقامی رہنماؤں سے ملاقاتیں کیں ، جن میں ضلع میں مل کر کام کرنے پر اتفاق کیا گیا۔ بتایا گیا ہے کہ جے یو آئی نے لاڑکانہ میں پی پی کے خلاف بنائے جانے والے عوامی اتحاد میں پی ٹی آئی اورجی ڈی اے کے علاوہ دیگر قوم پرست تنظیموں کو بھی ساتھ چلنے کی دعوت دی ہے ، جب کہ عوامی اتحاد میں شامل دیگر جماعتوں کے ساتھ مل کر جلد پاکستان پیپلزپارٹی کے خلاف مہم شروع کی جائے گی ، ذرائع کے مطابق لاڑکانہ عوامی اتحاد میں پی ٹی آئی کے اہم رہنما اللہ بخش انڑ اور رہنما امیربخش بھٹو جب کہ جی ڈی اے کے رہنما صفدر عباسی اور معظم عباسی شامل ہیں۔

(روزنامہ سیاست)

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں