’’ پرویز مشرف اور نواز شریف کے ساتھ یکساں سلوک ہونا چاہیئے۔۔‘‘  قائد مسلم لیگ(ن)کے پاسپورٹ کی تجدید کا معاملہ، حکومت کا  رد عمل بھی آگیا

’’ پرویز مشرف اور نواز شریف کے ساتھ یکساں سلوک ہونا چاہیئے۔۔‘‘ قائد مسلم لیگ(ن)کے پاسپورٹ کی تجدید کا معاملہ، حکومت کا رد عمل بھی آگیا

اسلام آباد (نیوز ڈیسک ) وزارت داخلہ نے سیکرٹری وزارت خارجہ سے کہاہے کہ نوازشریف کی پاسپورٹ رینیوکی درخواست پر کارروائی نہ کی جائے ۔اسی حوالے سےوفاقی وزیر اطلاعات شبلی فراز کا کہنا ہے کہ پاسپورٹ کے معاملے میں نواز شریف اور پرویز مشرف کے ساتھ یکساں سلوک ہونا چاہیے۔



نجی ٹی چینل کے پروگرام میں گفتگو کے دوران انہوں نے سابق وزیراعظم نواز شریف کے پاسپورٹ کی تجدید نہ کرنے کی حمایت کی۔


انہوں نے کہا کہ قانون کو پرویز مشرف کے ساتھ بھی یکساں سلوک کرنا چاہیے۔ سابق وزیراعظم نوازشریف کی جانب سے اپنے سفارتی پاسپورٹ کی تجدید کیلئے حکومت پاکستان کو خط لکھنے کا انکشاف ہوا ہے ۔


ایک ٹی ٹی وی کی رپورٹ کے مطابق سابق وزیر اعظم نوازشریف نے 15 فروری کو پاسپورٹ کی تجدید کیلئے خط لکھا جس میں کہا گیا ہے کہ 16 فروری کو سفارتی پاسپورٹ ختم ہورہا ہے نیا جاری کیا جائے۔


نواز شریف نے لندن ہائی کمیشن کو اپنے دستخط سے خط بھیجا ہے۔ قابل ذکر بات یہ ہے کہ نوازشریف نے ا س حکومت کو خط لکھا جسے وہ تسلیم نہیں کرتے۔



یہ انکشاف اس وقت سامنے آیا ہے جب و زارتِ داخلہ نے نوازشریف کی صحت اور علاج کی مکمل معلومات حاصل کرنے کے لیے یورپ کے ایڈیشنل سیکریٹری برائے وزارتِ خارجہ کو خط ارسال کیا ہے ۔ خط میں نوازشریف کی صحت، علاج اور موجودہ حالت کے بارے میں معلومات مانگی گئیں ہیں۔


خط میں مطالبہ کیا گیا ہے کہ ہائی کمیشن علاج کی تفصیلات کی حصول کے لیے نوازشریف سے راضی نامے پر دستخط کرائے تاکہ علاج کی تفصیلات حاصل کی جاسکیں۔قبل ازیں وزارتِ داخلہ نے وزارتِ خارجہ پاکستان کو ایک خط ارسال کیا جس میں لکھا گیا ہے کہ نوازشریف مفرور مجرم ہیں ، ان کے پاسپورٹ کی تجدید کی درخواست پر کارروائی نہ کی جائے۔





50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں