بریکنگ نیوز: سپریم کورٹ آف پاکستان نے میر شکیل الرحمان کی ضمانت پر رہائی کا حکم جاری کر دیا

اسلام آباد (ویب ڈیسک) جیو گروپ کے ایڈیٹرانچیف میر شکیل الرحمان کی درخواست ضمانت پر سپریم کورٹ میں سماعت ہوئی۔ سپریم کورٹ نے میر شکیل الرحمان کی ضمانت منظورکر لی ،10کروڑ روپے کے ضمانتی مچلکوں کےعوض ضمانت منظورکی گئی ،سپریم کورٹ کے تین رکنی بنچ نے 10کروڑ کے مچلکوں کے عوض

میر شکیل الرحمان کو ضمانت دے دی۔ سینئر صحافی مطیع اللہ جان کا میر شکیل الرحمان کی ضمانت منظور ہونے پر کہنا تھا کہ سپریم کورٹ میں ضمانت درخواستوں پر ایڈوکیٹ امجد پرویز نے طویل بحث کے بعد جب میر شکیل الرحمان کے خلاف الزامات کی قلعی کھول دی تو نیب کے وکیل ضمانت کی مخالفت سے دستبردار ہو گئے۔ نیب کے وکیل معزز ججوں کے سوالات کا جواب نہ دے سکے تو معزز ججوں نے بھی ضمانت درخواست کے میرٹ پر رائے نہ دی۔ جیو گروپ کے ہیڈ میر شکیل الرحمان کی لاہور ہائیکورٹ نے ضمانت کی درخواست مسترد کر دی تھی جس پر انہوں نے سپریم کورٹ سے رجوع کر رکھا تھا.جیو کے مالک میر شکیل الرحمن کو نیب نے گرفتار کیا تھا،جیو پر نواز شریف کی نوازشات، لاہور کی قیمتی ترین 54 کنال اراضی کا تحفہ ،نیب نے میر شکیل کونیب آفس بلایا جہاں وہ سوالات کے جوابات نہ دے سکے جس پرنیب نے میر شکیل الرحمن کو گرفتار کرلیا تھا۔

اس سے قبل میر شکیل الرحمان 5 مارچ کو پہلی مرتبہ اس کیس میں پیش ہوئے تھے، میر شکیل نے پہلی پیشی میں تین ملازم اور دو بچے نیب دفتر ساتھ لے جانے کی درخواست کی تھی تاہم ملازم ساتھ لانے کی درخواست مسترد کردی گئی تھی اور بچوں کو نیب دفتر میں داخلے کی اجازت دی گئی۔ میر شکیل سے استقبالیہ پر شناختی کارڈ لیا گیا اور اندراج رجسٹر پر دستخط کروائے گئے جس کے بعد انھیں کمرہ نمبر 2 میں لے جایا گیا جہاں اس سے قبل نواز شریف اور شہباز شریف سے بھی تفتیش ہو چکی ہے۔

Reference:Hassan Nisar

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں