صادق سنجرانی کی جیت کے پیچھے پیپلز پارٹی کا ہاتھ ہونے کا انکشاف! زرداری  کی وہ حکمت عملی جس نے  (ن) لیگ کو سخت پریشان کر دیا

صادق سنجرانی کی جیت کے پیچھے پیپلز پارٹی کا ہاتھ ہونے کا انکشاف! زرداری کی وہ حکمت عملی جس نے (ن) لیگ کو سخت پریشان کر دیا….

اسلام آباد (نیوز ڈیسک) پاکستان مسلم لیگ ن کے رہنماء احسن اقبال نے کہا ہے کہ پیپلز پارٹی نے حکمت عملی کے تحت اپنے سات ووٹوں کو ٹیکنیکلی ریجیکٹ کرا کے چئیرمین سینٹ کی سیٹ صادق سنجرانی کو پیش کی۔

تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل کے ایک پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ سینیٹ کے الیکشن مین پی ڈی ایم کی جماعتوں نے اتفاق رائے سے طے کیا کہ پیپلزپارٹی کی طرف سے چیئرمین سینیٹ کا امیدوار ہوگا جب کہ جے یو آئی سے ڈپٹی چیئرمین لیا جائے گا اور سینیٹ میں اپوزیشن لیڈر کا عہدہ مسلم لیگ ن کے پاس جائے گا ، لیکن پیپلزپارٹی نے خود ہی کسی طے شدہ حکمت عملی کے تحت اپنے سات ووٹ ٹیکنیکلی مسترد کرواکر چیئرمین سینیٹ کی نشست سادق سنجرانی کو پیش کی ، جس کے بعد انہوں نے کہا کہ اب ہمارا اپوزیشن لیڈر بنایا جائے جس پر وہ پہلے ہی اتفاق کرچکے تھے۔

احسن اقبال نے کہا کہ 26مارچ کو ایک سنہری موقع تھا کہ جب پیپلزپارٹی بھی لانگ مارچ اور استعفوں پر اتفاق کرلیتی جس پر پی ڈی ایم کی 9جماعتیں پہلے ہی رضامند تھیں لیکن پیپلزپارٹی نہ مانی جس کی وجہ سے ہمیں لانگ مارچ اور استعفے کا اپشن رد کرنا پڑا حالاں کہ وہ ایک ایسا مرحلہ تھا جس میں ہم حکومت پر ایک فیصلہ کن ضرب لگا سکتے تھے۔

مسلم لیگ نے کے رہنماء نے کہا کہ پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ نے بہت محنت کے ساتھ حکومت مخالف تحریک کو آگے بڑھایا لیکن جب ہم گول کرنے کے قریب تھے تو بدقسمتی سے ہم نے گیند کو سائیڈ لائن کی طرف پھینک دیا۔

علاوہ ازیں سینیٹ میں اپوزیشن لیڈر کے تقرر کے معاملے پر مسلم لیگ ن نے پیپلز پارٹی سے معذرت کرنے کا مطالبہ کردیا ، مسلم لیگ ن کے رہنماء رانا ثناءاللہ نے کہا ہے کہ سینیٹ میں اپوزیشن لیڈر کے تقرر پر پیپلز پارٹی معذرت کرے ورنہ پی ڈی ایم کی راہیں جدا ہو جائیں گی ، اب پیپلزپارٹی کے پاس ایک ہی راستہ ہے پی ڈی ایم اجلاس میں اپنے عمل پر معذرت کرے ، اگر پیپلزپارٹی معذرت نہیں کرتی تو اس کی راہیں پی ڈی ایم سے جدا ہیں ، انہوں نے کہا کہ ہم کہہ رہے ہیں پیپلزپارٹی نے حکومتی اتحاد کا سہارا لیکر پوزیشن حاصل کی ہے تو یہ سلیکٹڈ ہیں ، یہ پی ڈی ایم کے اتحاد کی نفی ہے ، پیپلزپارٹی ثابت کر دے کہ وہ خود انڈیپنڈنٹ لوگ ہیں۔

50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں