عمران خان کی اسمبلی میں مولانا کا نام لے کر تنقید! فضل الرحمان غصے میں آگئے، اچانک بڑا فیصلہ کر ڈالا

عمران خان کی اسمبلی میں مولانا کا نام لے کر تنقید! فضل الرحمان غصے میں آگئے، اچانک بڑا فیصلہ کر ڈالا

سکھر(نیوز ڈیسک)  پی ڈی ایم سربراہ مولانا فضل الرحمان نے کہا ہے کہ  قومی اسمبلی کا اجلاس جعلی وزیر اعظم کی سمری پر بلایا گیا ہے کیونکہ یہ سب کچھ ایک ڈھونگ ہے۔ہم پارلیمنٹ کے اجلاس اور اس میں اعتماد کے ووٹ کے عمل کو تسلیم نہیں کرتے۔ہمیں معلوم ہے کہ ارکان  پارلیمنٹ کی نگرانی کن کن ایجنسیوں نے کی۔



سکھر میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے مولانا فضل الرحمان کا کہنا تھا کہ پارلیمنٹ لارجز کے سامنے اپوزیشن قیادت کے انتہائی معزز رہنماؤں پر تحریک انصاف (پی ٹی آئی) کے لچے لفنگوں نے حملہ کیا اور ایسی بداخلاقی اور بدکرداروں سے ملک نہیں چلا کرتے۔ ایسے اوچھے ہتھکنڈوں کا جواب دے سکتے ہیں۔


انہوں نے پی ٹی آئی کے کارکنوں کو مخاطب کرکے کہا کہ ’تمہارا حکمران آج ہے کل نہیں ہوگا‘۔مولانا فضل الرحمٰن نے دھمکی دی کہ ’تمہیں گلی کوچوں میں جلنے کی بھی جگہ نہیں ملے گی اس لیے شرافت کا ہاتھ دامن سے نہ جانے دیں ورنہ اینٹ کا جواب پتھر سے دینا چاہتے ہیں‘۔ مولانا فضل الرحمٰن نے مزید کہا کہ ساری رات ممبرز کے دروازے کھٹکھٹا کر ووٹ لیے گئے اور اسمبلی کا جعلی اجلاس بلایاگیا، ہم اعتماد کا ووٹ تسلیم نہیں کرتے۔


صدر مملکت نے ایوان کا اجلاس بلایا جبکہ آئین میں صراط کے ساتھ کہا گیا کہ اگر صدر مملکت کو یقین ہوجائے کہ وزیر اعظم کے پاس اکثریت موجود نہیں ہے تو وہ ازخود اسمبلی کا اجلاس طلب کرے گا۔فضل الرحمان نے سوال کیا کہ پی آئی اے کے ملازمین نے کونسی کرپشن کی ہے،اسٹیل مل ملازمین نے کونسی کرپشن کی ہے، ان کو ملازمت سے نکالا گیا ۔








50% LikesVS
50% Dislikes

اپنا تبصرہ بھیجیں